Resemblance…!


I feel the lyrics resemble my situation…………….. 😛 😉 😀

تنہائی


سب چلے گئے اور میں ؛ میں تنہا !

بھاگو کلاس کا وقت ہو گیا ہے . ارے بابا رکو تو، سنو ! اچھا چلو، ایک تو یہ بڑی مصیبت ہے کہ تم سنتی نہیں کسی کی. بول دیا ؛ اب چلیں ؟ ہاں چلو .

ٹہر جاؤ؛ آخر جلدی کس بات کی ہے. یہ ؛ یہ تم کہ رہی ہو؟ ہاں میں کہ رہی ہوں. اس میں حیرت کیا ہے. نن نہیں حیرت تو نہیں پر مجھے یقین نہیں آ رہا. تم حیران ہوتی رہو، میں جا رہی ہوں ورنہ دیر ہو جائے گی.

رکو ارے سنو تو؛ چلی گیئ.

تم وقت کے پیچھے بھاگنا چھوڑ دو. میں وقت کے پیچھے بھاگتی نہیں وقت کے ساتھ چلتی ہوں. اتنے اعداد و شمار کے ساتھ زندگی گزارنے کی کیا ضرورت ہے.

تم نہیں سمجھو گی. تو تم سمجھا دو نا. وقت کی قدر کرنا سیکھو. تم اور تمہارا فلسفہ؛ بس کافی ہے تم ہی کرو قدر!

میری اسائنمنٹ مکمل ہو گیئ ہے. اتنی جلدی؟ جلدی تو نہیں. پر؛

جان چھوٹی؛ یونیورسٹی بھی ختم.

تم کیا سوچ رہی ہو؟

ہاں! میں جاب کے بارے میں سوچ رہی تھی. کیا ؟ تم؛ یعنی تم اب جاب کرو گی ؟ لڑکی آرام کر لو چند روز. نہیں؛ موقع بار بار نہیں ملتا.

جیسی تمہاری مرضی؛ میں تو آرام کروں گی. فراغت!

تمہاری سہیلی ایئ تھی اپنی شادی کا کارڈ لے کر. سن رہی ہو ؟ تمسے کہ رہی ہوں . ہاں ماں سن رہی ہوں.

پتا نہیں کیا بنے گا اس لڑکی کا.

اچار!

کیا ؟ کبھی تو سنجیدہ ہو جایا کرو. ہو جاؤں گی ماں. کب ؟

جب کوئی پہل کرے گا. میں جا رہی ہوں ورنہ دیر ہو جائے گی.

جانتی ہو کتنا وقت گزر گیا ہے؟ ہاں ماں. وقت گذرنے کے لئے ہی تو ہوتا ہے، سو گزر گیا.

میں الله سے بہتری مانگتی ہوں. ہاں ماں، اب سو جاؤ!

تم کب تک جاب کرو گی؟ معلوم نہیں. آخر شادی کیوں نہیں کر لیتی؟ ہاں کرلوں گی. کب ؟ جب کوئی کرنا چاہے گا. مطلب؟ کچھ نہیں. تمنے بتایا نہیں کتنے بچے ہیں تمہارے؟ ماشاللہ تین!

پانچ سال گزر گئے. پانچ ؛ ہاں پر تم کیا سوچ رہی ہو؟ کچھ نہیں ماں، دفتر کا کام ہے، اسی کے بارے میں سوچ رہی تھی.

کچھ کھاؤ گی؟ نہیں بھوک نہیں!

کیوں اتنی تنہا ہو ؟ سوال تھا یا بازگشت!

وقت بیت گیا اور ایک ایک کر کے سب چلے گئے. میں تنہا کیوں ہوں ! کسی کا برا تو نہیں کیا مینے، پھر!

تمام دوست بچھڑ گئے اور میں؟ میں کس کا انتظار کر رہی ہوں؟ کبھی وقت کو بےقدر تو نہیں کیا پھر؛ پھر تنہا کیوں ہوں ؟

آسمان تاروں سے سجا ہے، صرف اک چاند ہی تنہا ہے تو کیا میں بھی چاند کی مانند ہوں یا اماوس کی رات چھآ گیئ ہے میری زندگی پر!

نیچے آجاؤ؛ کھانا کھا لو. نماز میں تاخیر ہو جائے گی .

ہاں ماں؛ آ رہی ہوں.

چہرے پہ ہاتھ پھیرتے ہوے نمی محسوس ہوئی، بارش تو نہیں پھر. شائد آنکھ میں کچھ چلا گیا. بیدردی سے آنکھ رگڑی اور سیڑھیاں اتر گیئ.

اماوس کی رات ڈھلی نہیں تھی، اندھیرا کچھ اور گہرا ہو گیا تھا .

تنہائی باہر نہیں؛ اندر تک اتر چکی تھی.

گہری کالی تنہائی!

اب کوئی چاہ نہیں


بہاروں میں پھول چننے کی ،

رات کے اندھیرے میں، تاروں سے باتیں کرنے کی ،

برستی بارش میں، بوندوں کو قید کرنے کی ،

تنہائی کے لمحوں میں، اپنی ذات کو کھوجنے کی ،

اب کوئی چاہ نہیں !

کوئی بیتا لمحہ لوٹ آے،

آسمان و دھرتی کے بیچ، دوبارہ پنکھ پھیلا پاے،

دل موسم کے بدلنے پہ، یونہی گنگنا پاے،

کوئی چھڑے ایسا سر، محبّت تعظیم کر پاے،

اب کوئی چاہ نہیں !

Wasif Added beautiful lines……!

تم جب سے بچھڑے ہو،

ہر چیز سونی لگتی ہے،

اب اس من میں چھآی تاریکی کو،

ایک نیی صبح کی،

اب کوئی چا ہ نہیں!

I Am 29…!


HAPPY BIRTHDAY TO ME, HAPPY BIRTHDAY TO ME, HAPPY BIRTHDAY DEAR ME, HAPPY BIRTHDAY TO ME…! YAYYYYYYYYYYYYYYYYYY……………..!

HEYYYYYY…………YOU ALL ARE INVITED BUT UMMMMHMMMMMMMMMM……..DO BRING GIFTS……… 😉

WAITING FOR THE CAKE…………..

TIME TO LIT CANDLES FIRST……….

ARE YOU COUNTING, WHETHER CANDLES ARE 29 OR LESS…… 😀 SORRY BUT I FOUND AS MANY AS YOU ARE SEEING…….. 😛

GUESTS ARE COMING……

WAIT WAIT WAIT………..HERE IS MY BIRTHDAY CAKE………

I WISH THERE COULD BE SOMEONE TO SAY………

OR ELSE I WOULD HAVE NOT BE FEELING LONELY…………

DONT BE SADDY SADDY……IT’S MY BIRTHDAY GUYS………….AT LEAST BRING ME SOME GIFTS…….. 😉 😀

SEE BEATLES IS WISHING ME BIRTHDAY…………..

LETS OPEN THE GIFTS……….

WOOHOOOOO……..TOOOOOOOOOOOOO HEAVY………… 😉

THANKS FOR JOINING ME ON MY SPECIAL DAY…………. 🙂

بتا دے!


گر ؛
اوکات نہیں میری ،
پھر بھی پوچھا رب سے ،
اے رب العزت ؛ اتنا تو بتا دے ،
کیا ہوئی مجھ سے خطا،
کہ ؛
ہر انسان ہے مجھ سے روٹھا سا ،
بیشک ؛ آسان نہیں منا سکوں روٹھے انساں کو ،
اتنا تو حق دے اے خداوند ،
کہ ؛
اٹھا سکوں دو ہاتھ واسطے مغفرت ،
آج پھر آنسوؤں سے لبریز ہیں آنکھیں ،
کیا برا کیا مینے کسی کا ،
کس کے ہاتھ سے چھینا نوالہ ،
آج تو بتا دے اے رب ،
تو ہے بتا دے ؛ کیا برا کیا مینے کسی کا !

Blood Stain!


The translation of Love has become blurred and stigmatic due to unserious expressions and thoughts of apposite genders which unanimously degrading the pure emotion of life. Love is not only the love between apposite genders but Love is the overall reason of creation of Life in Galaxy; everything seems in Love with each other. Earth Loves its orbit, Moon loves Stars, Sky loves Earth, Flower Loves thorns, Air Loves fragrance, Fishes Loves Water, and Human Loves humanity but if it still remains in their hearts. Nevertheless, all are in the glory of Love and affection.

But polluted minds have changed the meaning of Love by their lusty thoughts and corrupted expressions. “I Love you” is the line of every next Boy/Girl to apposite one but unfocused and immature. As far as facts are concerned, boys play more dramatically with the emotions of girls by their fake appearances and gestures whilst girls are more vulnerable to fall in trust on them which are the most happening start of so called Love stories.

You seem to be my world, I have nothing in my cart without you, you are everything for me, there is no other girl in my life etc etc. Can you come to meet me? Why are you wearing this long Scarf? Can you wear it little down on your head? Are you coming to have a cup of tea with me? Why don’t you lie with your parents? Can’t you lie for me? Will you come to the hotel, I want to see you. It’s not bad to make Love because we are mature and Love each other. Initially girl would be bit hesitant but ofcource Devil is never far apart so amuses after little arguments. You are pretty, I will marry you, I promise. Surely I am sending my parents to your home but you must come to meet me. Don’t you trust me? I am sincere with you. We are alone and no one is seeing us, I am Loving you because I Love you.

Why are you not receiving my calls? Please I want to meet you. Why don’t you understand, I love you but why are you not sending your proposal? Your Love is causing prominent appearance. I can’t hide it anymore, why are you not accepting it? Please marry me. But you said you Love me, didn’t you?

Drop it! What? Yes I am saying so, abort it. But!

The murder of innocent soul who even wasn’t aware of his creation. Who didn’t know, how he came into existence and why is he going to die? For whom is he going to die without taking his first breath into this brutal world?

Illegal abortions and death of immature babies is not unserious dilemma but it’s a severe issue to count for. The second option still exists which allows these cruel minds to bring those so called babies into this world and leave them like orphans with the whores while let them live as a parasite in the society; unacceptable and unadoptable. Or throw new born in the dirt bins, place in the cradle of NGO’s etc.

You are not my type, I have realized my mistake and it would be in favor of both of us to apart. I was just infatuated, we don’t Love each other but it was only attraction. We can’t live together, there are uncountable differences in our views, and also my family won’t accept you. End of Love!

Whoever could be the reason, what so ever would happen, whether they live together or apart, whether they find their perfect match in future or move on their selected ways, none could ever justify the reason of death of immature soul or make him reside in prostitute’s area like a stagnant piece who would never be able to make his existence acceptable in the world.

Isn’t it a Taboo of Society? Would there be any validation of Invisible Blood Stain on the hands of us?

Sorry Seems To Be The Hardest Word…..Elton John!