بظاھر


اور ؛
کبھی کھولو جو اوراق پرانے ،
جو وقت ملے تو ،
جو کچھ دیر تھم جاؤ،
حروف کی پگلتھی سیاہی کو انگلیوں سے سہلاؤ ،
تو پڑھ لینا ، یہ جان لینا ،
دنیا کے سراب میں رہیں نہ رہیں ،
زندہ رہیں گے تب تلک ،
جب تک زندہ رہیں تمہارے دل میں ،
کبھی جھانک لینا ، اور یہ مان لینا ،
بظاھر نہیں مگر ،
موجود ہیں ہم تمہاری روح میں ،
اور ؛
جس دن روشنی ماند پڑے ،
احساس رکھنا ،
بھول گئے تم ،
اور چل دیے ہم ،
مسکرا دینا اور بڑھ جانا ،
الودا ع ،
آباد رہے تمہارا نیا جہاں !