Alhamdolillah…!


Alhamdolillah...!

Advertisements

Wait….!


wait

حقیقت


 اداس ہو ؟

ہاں … نہیں نہیں ….

کچھ سوچ رہی ہو؟

سوچتی ہوں ، راہ  طویل  ہے اور زاد راہ کچھ نہیں، سفر کٹے تو کیوں کر …..

ضروری کیا ہے؟ سفر یا  زاد راہ ؟

معلوم نہیں ، قدم اس قدر بھاری ہیں کہ لگتا ہے اب کبھی چل نہیں پاؤں گی ….

تو سوچتی کیا ہو…زد راہ تلاش کر لو… قدم اپنے آپ بڑھنے لگیں گے…

یوں کہتے ہو جیسے تلاش کرنے سے زاد راہ مل ہی جائے گا ، یوں جیسے آنکھ کھولوں گی تو حقیقت بدل ہی  جائے گی …..

پھر غم کاہے کا… جب اپنے ہاتھ ہی کچھ نہیں تو سوچو مت ….. کیوں برباد کرتی ہے خود کو …..جانے دے…سب جانے دے …. حقیقت کھلی آنکھ سے دکھتی ہے …. بند آنکھیں صرف دھوکہ ہیں…. چل جا… کہیں کوئی دروازہ کبھی مل ہی جائے، تب سستا لینا اور نہ ملا تو بھی آخری آرام گاہ آ ہی جائے جی …. سب کی آے گی …تیری بھی اور میری بھی…. سوچ مت …. جو نہیں ہے وہ کبھی نہیں ہوگا…جو ہے …بیابان ہی سہی ، وہی تیرا حصہ ہے….