I Miss You!


It has been long when I started blogging and came across very nice people who became my FRIENDS but now I MISS THEM all. They have got busy in their lives and of course priorities have been changed but I MISS THEM!

 

Ayesha (Fifth Junction)

Aadil Saadil

BMK BMKDOT

Shagufta Abbas C it my way!

Rida Munaf Reedssss

Anum Munaf

MajWorld MajWorld’s Blog

Haris Gulzar Amar Bail

Dua Moody Couple

Nouman Misc Thoughts

Hira Zainab Spotless Soul

Alhamdolillah Alhamdolillah

Muhammad Wasif Javed

 

Please Comment if you read this Post…  🙂

نصیب


یہ دنیا جینے کی جگہ نہیں ہے ، ابدی نہیں دائمی نہیں. پھر بھی انسان بھاگتا رہتا ہے کبھی ایک خواھش کبھی دوسری کے پیچھے اور یونہی بھاگتے بھاگتے ایک دن آخری منزل آ جاتی ہے. سب کی آے گی میری بھی تمہاری بھی . پھر یوں ہوتا ہے کہ جونہیں مل پاتا اس پہ یا تو انسان صبر کر لیتا ہے یا پھر یوں کہا جائے کہ خود کو بہلا لیتا ہے یہ کہ کر “جو نہیں ملا اس میں الله کی رضا ، اس جہاں میں نہیں اس جہاں میں ملے گا ” پھر منہ چھپاتا پھرتا ہے اس ہر شہ سے یہ سوچ کر کہ یہ مجھے پسند ہی نہیں. تو کیا یہ سچ ہے “انگور کھٹے ہیں” . حقیقت میں خواہش ختم نہیں ہوتی، خواہش کبھی نہیں مرتی ، وہ زندہ رہتی ہے انسان کے اندر جب تک انسان کی ابدی موت نہ آجاے . کسی کو جینے کا موقع ملتا ہے کسی کو نہیں، پر اس کا ہرگز یہ مطلب نہیں کہ اسے کسی شہ کی خواہش ہی نہیں . خواہش ہے بس اس کے نصیب میں نہیں اور نصیب الله کے سوا کوئی نہیں بدل سکتا. ہوتے ہیں کچھ نصیب والے جو مٹی کو بھی سونا کرنے کا ہنر رکھتے ہیں ، جن کی ہر خواہش ان کے دل میں جاگنے سے پہلے ان کے نصیب میں لکھ دی جاتی ہے . پر ہر انسان مختلف ہے ، ہر انسان کا نصیب بھی مختلف ہے . سب کے ہاتھ سونا نہیں آتا ، سب کا نصیب ستاروں کی مانند نہیں جگمگاتا . تو پھر فیصلہ ہوا بس اسی یقین پہ زندہ رہو “کوئی ہو نہ ہو الله ہے ، کوئی نہیں تھا تب  بھی وہی تھا، کوئی نہیں ہوگا تب بھی وہی ہوگا “

جانے وہ کیسے لوگ تھے، جن کے پیار کو پیار ملا (Title Song of Pakistani Drama “Pyarey Afzal”)


جانے وہ کیسے لوگ تھے، جن کے پیار کو پیار ملا ،
جانے وہ کیسے لوگ تھے، جن کے پیار کو پیار ملا ،

ہم نے تو جب کلیاں مانگیں کانٹوں کا ہار ملا،
جانے وہ کیسے لوگ تھے، جن کے پیار کو پیار ملا ،

خوشیوں کی منزل ڈھونڈی تو غم کی گرد ملی ،
خوشیوں کی منزل ڈھونڈی تو غم کی گرد ملی ،
چاہت کے نغمیں چاہے تو ، آہیں سرد ملیں ،
دل کے بوجھ کو دونا کر گیا، جو غم خار ملا ،
جانے وہ کیسے لوگ تھے، جن کے پیار کو پیار ملا ،

بچھڑ گیا، بچھڑ گیا،
بچھڑ گیا ہر ساتھی دے کر پل دو پل کا ساتھ ،
کس کو فرصت ہے جو تھامے دیوانوں کا ہاتھ،
ہم کو اپنا سایہ تک، اکثر بیزار ملا،
جانے وہ کیسے لوگ تھے، جن کے پیار کو پیار ملا !

Wordless!


I wish I could make people understand what do I want to convey and how do I feel, I wish someone somewhere could understand a tiny bit of me or I am wishing for something next to impossible thing. I wish at least my blood relatives could understand me rather making thier own assumptions about my behavior. I wish I could have proper word’s vocabulary to make them understand, I wish I could speak diplomatically. I wish people could understand that words are worst harmful than any sword…. I just wish!